Pages

Unki mahek ne dil ke tazmeen lyrics

Unki mahek ne dil ke tazmeen lyrics :


Koneen ke dulha ke sadqe me khudai hai 

Maheboob e kareem ne ha shaan ye paai hai 

Maula ne fatarza ki  khushkhabari Sunai hai

Sunte Hain Ki Maheshwar mein sirf Unki Rasai hai

Ghar Unki Rasai Hai Lo Jab to Ban Aai hai


کونین کے دولہا کے صدقے میں خداٸی ہے

محبوبِ کریما ﷺ نے ہاں شان وہ پاٸی ہے

مولیٰﷻ نے فَتَرۡضٰی کی خوشخبری سناٸی ہے

سُنتے ہیں کہ محشر میں صرف اُنکی رَسائی ہے

گر اُن کی رَسائی ہے لو جب تو بن آئی ہے



رحمت نے سرِ محشر کیا رنگ جماٸی ہے

سوغاتِ کرم دیکھو لَا تَقۡنَطُوۡا لاٸی ہے

آقا کی شفاعت نے کیا دھوم مچاٸی ہے

مچلا ہے کہ رحمت نے اُمید بندھائی ہے

کیا بات تِری مجرم کیا بات بَنائی ہے


Rehmat Ne Sare Maheshwar Kiya Rang Jamai hai

Saugat Karam Dekho laa tak Naa Tu Lai hai

Aaka ki shafaat ne kya Dhoom machai hai

Machla hai ke Rehmat Ne ummid bandhai hai

Kya baat teri Mujrim kya baat Banai hai. 


اعمالِ سیہ نے جب پھِٹکار دیا ہم کو

ہم کیا کہیں اپنوں نے کیا پیار دیا ہم کو

ماں باپ نے بھی آقاﷺ دھُتکار دیا ہم کو

سب نے صف محشر میں لَلکار دیا ہم کو

اے بے کسوں کے آقا اب تیری دُہائی ہے


Amal Siya Ne Jab fitkaar Diya Humko

Ham Kya Kahen apno Ne Kya Pyar Diya Humko

Maa Baap Ne Bhi Aaka dhutkaar Diya Humko

Sabne safe Maheshwar Mein lalkar Diya Humko

Aye bekasoon ke Aaqa ab Teri Duhai hai. 



سرکار ﷺ کی عظمت کا جب ذکرِ جلی چھیڑو

بازارِ محبت میں پھر ہوش و خِرَد بیچو

گلدستۂ تن ، من ، دھن ہرچیز ہی اے لوگو

یُوں تو سب اُنہیں کا ہے پَر دل کی اگر پوچھو

یہ ٹُوٹے ہوئے دِل ہی خاص اُن کی کمائی ہے



Sarkar ki Azmat Ka Jab zikra Jali chhedo

Bazaar-e-mohabbat mein phir hosh o quradd bhecho 

Guldasta Tan Man Dhan Har cheej hi aye logon

Yun To Sab unhin Ka Hai Per Dil ki agar Poochho

Yun Tute Hue Dil Hi Khas Unki kamai hai. 


یوں بزمِ محبت سے ہرگز نہ تُو خالی اٹھ

محبوب کی چوکھٹ سے لےکر کے سوالی اٹھ

سرکارِ مدینہ ﷺ کے اے قلبِ فداٸی اٹھ

اے دل یہ سُلگنا کیا جلنا ہے تو جل بھی اُٹھ

دَم گھُٹنے لگا ظالِم کیا دُھونی رَمائی ہے


دنیا کی نماٸش پر احباب نہ اتراٶ

اب خوابِ تغافُل سے اے یار ذرا جاگو

دیتی ہے صدا میّت کوٸی تو ذرا سن لو

مجرم کو نہ شرماؤ احباب کفن ڈَھک دو

مُنھ دیکھ کے کیا ہو گا پردے میں بھلائی ہے


Dunya ki namaish par ahebaab na itrao 

Abb khawab e tagaful se aye yaar zara jago 

Deti hai sada maiyat koi tu zara sunlo 

Mujrim ko na sharmao ahebaab kafan dhak do 

Moon deekh ke kiya huga pard me bhalai hai. 


حُبّ شہِ طیبہ سے ہموار ہوۓ رستے

ہم حشر میں ورنہ پھر بس ایڑیاں ہی گھِستے

اور آتشِ دوزخ کے شُعلوں میں بھی ہم پھَنستے

اے عشق تِرے صَدقے جلنے سے چُھٹے سَستے

جو آگ بجھا دے گی وہ آگ لگائی ہے


Hubbe shahe taiba se hamwaar hue raste 

Ham hashr me warna phir bass eidiyaan hi ghista 

Aur aatish e dozakh ke shoole me bhi ham phanste 

Aye ishq e tere sadq e jalne se chhutte saste

Jo aag bujhade Gi Wo Aag Lagai hai. 


طیبہ و حرم دونوں ہیں جاۓ شَرَف عابد

یہ فیصلہ سن لے اب نہ بات بڑھا زاٸد

سر سوۓ حرم خَم ہے ، دل طیبہ کا ہے ساجد

طیبہ نہ سہی اَفضل مَکّہ ہی بڑا زاہِد

ہم عِشق کے بندے ہیں کیوں بات بڑھائی ہے


وہ جن کی بزرگی کا کونین میں ہے ہَلّہ

مختارِ شریعت ہیں لَارَیب رسولُ اللہ

ایوبؔ نہیں کوٸی اُس ذات کا ہم پلّہ

مَطلَع میں یہ شک کیا تھا واللہ رضاؔ واللہ

صرف اُنکی رَسائی ہے صرف اُنکی رَسائی ہے


Wo jinki buzurgi ka konen me hai halla 

Mukhtaar e shariat hain laa raib rasool allah 

Ayub nahi koi us zaat ka ham palla 

Matlaa me ye shakk kiya tha wallah Raza wallah 

Sirf unki rasai hai sirf unki rasai hai. 

Post a Comment

Please have any doubts, please let me know
Post a Comment